April 11, 2016

میں وی 'مہران' لئی سی


پاکستان میں ہمارے ہوش سنبھالنے کے بعد سوزکی مہران کار جو تب آلٹو Alto کہلاتی تھی سے اور جس نے سوزکی ایف ایکس  Fx کی جگہ لی تھی سے آشنائی کا سفر شروع ہوا۔ اس زمانے میں کاریں خال خال ہوا کرتی تھیں اور ایف ایکس بھی بڑے رتبے اور اونچے خاندان کی نشانی ہوا کرتی تھی۔ پھر ایف ایکس بدلی مہران آئی اور اس کی وقعت و معیار ہماری اخلاقی قدروں کی طرح گرتے چلے گئے۔ جب مہران جو تب آلٹو کہلاتی تھی کا پہلا ماڈل آیا تو اس میں اور ایف ایکس میں چند ایک تبدیلیاں کی گئیں جیسے مہران کا بونٹ نیچے کو جھکا بنایا گیا، اسٹیرنگ کے ساتھ ہوا پھینکنے کے لیے روائیتی بٹن یا لیور کی بجائے گول پہیے لگائے گئے، ایف ایکس کا خاص بسکٹی رنگ ختم کر کے آلٹو مختلف رنگوں میں آ گئی۔
مزید پڑھیے Résuméabuiyad

April 1, 2016

دربار محل(تصویری) ، بہاولپور


دربار محل، بہاول پور


ماشااللہ سے ایسی طبعیت پائی ہے کہ روز اول سے بہت کم جگہیں اور عمارتیں ہیں جنہوں نے متاثر کیا ہو۔ 2010 میں جب پہلی بار بارسلونا گئے تھے تو جانتے تھے کہ ایک عام یورپی کی دس سرفہرست خواہشوں میں سے ایک یہ بھی ہوتی ہے کہ پرتگال یا بارسلونا کی سیاحت کی جائے۔ لیکن ہم وہاں چار دن رہے اور کسی بھی شے سے متاثر نہ ہوپائے - بس وہ دن اور 
آج کا دن پیسا مینار سے لیکر برج خلیفہ تک ہم اچھاااا کہہ کر گزر گئے۔
مزید پڑھیے Résuméabuiyad

March 19, 2016

ہم جیسے کہاں تم کو 'سلیقہ شعار' ملیں گے


کیا آپ نے کبھی سنا ہے کسی نے ناخن تراش سے ناخن کاٹتے وقت اپنی انگلیاں زخمی کر بیٹھا ہو؟ اگر نہیں تو آج ہی مجھ سے مل کر پرانے زمانے کی سگھڑ خواتین کی یاد تازہ کریں اور اگر مل چکے ہیں تو جگر تھام کر بیٹھیے اور ہماری داستان سنیں کہ ایسی داستان نہ ہو گی داستانوں میں (اس مصرع کو تنبیہ کی بجائے ترجیع کے معنوں میں پڑھا جاوے)۔
مزید پڑھیے Résuméabuiyad

March 5, 2016

درشن چھوٹے نام بہت


جب میں نے پہلی بار 'شہاب نامہ' پڑھی تھی تو میں اتنا چھوٹا تھا کہ سمجھ بوجھ کے بغیر بس اردو پڑھ لیتا تھا۔ کتاب کے ٹائیٹل صفحے پر قدرت اللہ شہاب کی باریش تصویر اور آخری باب میں وظیفے دیکھ کر جب کتاب کے درمیان میں ان کی جوانی کی بے ریش اور پتلون کوٹ والی تصویر دیکھی تو دل کو دھچکا سا لگا کہ ایک سیدھے سادے دین دار گھرانے میں اس وقت پتلون صرف خاص مواقع پر پہنی جاتی تھی۔ میں رہ نہ سکا اور والدہ سے پوچھ بیٹھا کہ شہاب صاحب پینٹ بھی پہنا کرتے تھے۔؟

مزید پڑھیے Résuméabuiyad

February 11, 2016

سلووینیا کا سفر



 سلووینیا Slovenia جانے کا سودا دماغ میں تب کا سمایا تھا جب کا پہلی بار اٹلی گیا تھا۔ اس میں زیادہ قصور میرے دماغ سے نقشہ نویسوں کا تھا جنہوں نے ایسے نقشے بنائے کہ تمام یورپ ایک بالشت میں سما جاتا ہے اور سلووینیا تو گویا وینس سے ایک پور دور تھا۔ لیکن جانا جب تک لکھا نہ ہو تب تک کیسے ہو تو اٹلی کے چکر لگا لگا کر جہاز گھس گئے یہاں تک کہ ایدریا ہوائی کمپنی نے لیوبلیانا سے براہ راست تالن کے لیے فضائی سروس شروع کر دی لیکن ہم جہاں نقد پر آدھا ادا کرنا ہو کو ادھار پر دوگنا ادا کرنا پڑے کو ترجیع دیتے ہیں اس ارادے پر قائم رہے کہ جائیں گے تو اٹلی سے براستہ سڑک جائیں گے کہ اتنے اچھے ہم بھی نہیں کہ براہ راست ٹکٹ خریدیں، ہوٹل بک کرائیں اور جائیں بھی کہاں؟ لوبییانا۔

مزید پڑھیے Résuméabuiyad

January 11, 2016

چھٹی سالگرہ



لیں جی، یہ بیچارہ سا بلاگ چھ سال کا بوڑھا ہو گیاہے۔ ان چھ سالوں میں یہ دو سو ساتویں پوسٹ ہے جبکہ پھیرے مار یعنی وزیٹر تقریباً ایک لاکھ نوے ہزار تک جا پہنچے ہیں۔ یوں تو کسی بھی بلاگ کی کامیابی کو جانچنے کے کئی ایک نسخے ہیں جن میں سے ہمارے نزدیک سب ناکام ہیں اور بس کامیابی یہ ہے کہ چھ سال سے مسلسل لکھے جا رہا ہوں-
مزید پڑھیے Résuméabuiyad

January 1, 2016

نیا سال اور منانا


جس دور میں ہم پیدا ہوئے تب نیا سال منانے کا رواج نہ تھا- اس کی وجہ یہ ہو سکتی ہے کہ پاکستان میں کسی کو روٹھے رشتہ داروں کو منانے سے فرصت ملے تو کچھ اور منائے- جب نیا سال آنے لگتا تو ہم صرف اس لیے پرجوش ہوجاتے کہ کاپیوں پر سال کے ہندسے بھی تبدیل ہوں گے اور ہم جو سارا سال محض دن اور ماہ لکھ کر کام چلایا کرتے تھے دسمبر میں سال بھی لکھنا شروع کردیتے۔ لیکن ہائے ری ہماری سادگی کہ جس بے تابی سے انتظار کیا کرتے اسی شدت سے فراموش بھی کر دیتے اور نئے سال کے پہلے پندرہ دن بدستور پچھلا سال ہی لکھے جاتے اور آخر تنگ آ کر دوبارہ دن اور ماہ پر لوٹ آتے۔

مزید پڑھیے Résuméabuiyad

December 21, 2015

قائد اعظم- اردو مضمون


پیش تحریر: کمزور دل اور تنگ دل حضرات یہ مضمون نہ پڑھیں

قائد اعظم 25 دسمبر 1887 کوکراچی میں پیدا ہوئے،آپ کا نام محمد علی رکھا گیا اور آپ کا خاندان جناح کہلاتا تھا۔ چونکہ اس وقت شعیہ سنی وغیرہ پیدا ہونے کی سہولت موجود نہ تھی لہذا وہ مسلمان کہلائے- اگرچہ ان کی وفات کے بعد خاصے لوگوں نے انکو یہ سہولت بہم پہنچانے کی کوشش کی ہے لیکن ابھی تک ان کو زیادہ تر مسلمان ہی گنا جاتا ہے-
مزید پڑھیے Résuméabuiyad

December 11, 2015

موٹاپا کم کرنے کے آسان نسخے



 موٹوں  اور موٹاپا دونوں سے چھٹکارا حاصل کرنے کے لیے انسان کو بے رحم ہونا پڑتا ہے فرق یہ ہے کہ پہلے کے لیے دوسروں کے لیے بے رحم ہونا پڑتا ہے اور موخر الذکر کے لیے اپنے آپ سے بے رحم ہونا پڑتا ہے اور ویسے بھی کچھ بھی اوقات سے باہر ہو جائے تو واپسی مشکل ہوتی ہے خواہ وہ آپ کا پیٹ ہی کیوں نہ ہو جو پیٹ سے گیٹ کا فاصلہ تو چند دنوں میں طے کر لیتا ہے لیکن ایسی شکل جس کوکسی حد تک پیٹ کہا جا سکتا ہو میں واپسی کے لیے لاکھوں جتن کرنے پڑتے ہیں۔
مزید پڑھیے Résuméabuiyad

December 1, 2015

تین خود ساختہ اردو بلاگروں کی ملاقات


ایک دفعہ کا ذکر ہے کہ ایک جگہ تین بزعم خود اردو بلاگنگ کے ٹھیکیدار اکٹھے ہوئے- ان میں سے ایک ڈاکٹر ایک دانشور اور ایک ادیب تھا۔ عام طور پر جب اتنے بڑے لوگ اکٹھے ہوں تو لوگوں کو توقع ہوتی ہے کہ کوئی ادب کی بات ہو گی، کوئی دانشوری جھاڑی جائے گی، کچھ تخلیقی موضوع زیر بحث ہو گا کچھ شاہ پارہ تخلیق ہوگا تو ایسے لوگوں کی تسلی کے لیے اس ملاقات کے کچھ مکالمے ٹکڑوں کی صورت میں جس کو دیسی زبان میں "ٹوٹے یا ٹریلر" کہا جاتا ہے پیش کیے جا رہے ہیں۔ جہاں جہاں گفتگو کرنے والا کا نام نہیں لکھا وہاں اپنی صلاحیت بروئے کار لائیں اور تینوں میں سے جو مناسب لگے اس کو ٹانگ کر کام چلائیں۔ آخر میں یاد کراتا چلوں کے یہ تمام واقعات فرضی نہیں ہیں۔
مزید پڑھیے Résuméabuiyad